2030میں رمضان المبارک دومرتبہ آئے گا ماہرین ِ فلکیات کی حیرن کن پیش گوئی

رمضان المبارک

میڈیارپورٹس کے مطابق ماہرِفلکیات نے اپنے ٹویٹر اکانٹ پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں کہا کہ دونوں کیلنڈروں کے درمیان تفاوت کا مطلب یہ ہے کہ رمضان ایک گریگوری سال میں قریبا ہر 30 سال میں دوبارآتا ہے۔آخری بارایساسنہ 1997 میں ہوا تھا اور اس سے پہلے 1965 میں ہوا تھا۔سنہ 2063 میں ایک مرتبہ پھر دوباررمضان آئے گا۔

ہجری سال 1451ھ میں رمضان المبارک کا آغاز5 جنوری 2030 کے آس پاس ہوگا اور سال 1452ھ میں رمضان 26 دسمبر 2030 کے آس پاس آئے گا۔اس کے نتیجے میں مسلمان 2030 میں مجموعی طور پر قریبا 36 دن روزے رکھیں گے،سال 1451ھ میں 30 دن کا پورا مہینہ اور سال 1452 میں پانچ یا چھے دن۔ہجری قمری سال 354 یا 355 دن کا ہوتا ہے، یعنی یہ 365 دن کے گریگوری سال کے مطابق نہیں بلکہ دونوں تقویموں کے ایام میں ہیرپھیرہوتا رہتا ہے۔اس کا مطلب یہ بھی ہے کہ رمضان ہرسال مختلف موسموں میں آتا ہے اورقریبا 32 سال کے بعد دوبارہ ایک پورے شمسی مہینے میں آجاتا ہے۔رمضان 1449ھ، 2028 میں شروع ہونے والا ہے اور یہ موسم سرما کے وسط میں ہوگا۔1466ھ بمطابق 2044 میں رمضان کا مقدس مہینہ موسم گرما کے عروج کے دنوں میں شروع ہوگا۔

رمضان المبارک میں روزہ مطلع فجرسے غروب آفتاب تک رکھا جاتا ہے، یعنی روزے کاطویل ترین دورانیہ اس وقت ہوتا ہے جب رمضان موسم گرما میں ہوتا ہے اوربعض علاقوں میں روزہ سولہ گھنٹے سے بھی طویل ہوتا ہے۔ سردیوں میں روزے کا دورانیہ کم ہوتا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں